fbpx
News

کرکٹ بورڈ کے خلاف جا کر حفیظ نے اچھا نہیں کیا -شعیب اختر

اس بات سے تو آپ سب با خبر ہیں کہ جب سے پاکستان کرکٹ ٹیم کا دورہ انگلینڈ جانے کا اعلان ہوا ہے تب سے کرکٹ حلقوں میں ایک خاص قسم کی ہلچل مچی ہوئی ہے گو کہ آج پاکستان کرکٹ ٹیم انگلینڈ کے لیے خصوصی طیارے سے روانہ ہو چکی ہے مگر پھر بھی کچھ باتیں ایسی ہے جو یہاں پر رہ گئے اور کچھ لوگ بھی ایسے ہیں جو ابھی تک انگلینڈ کے لیے روانہ نہیں ہوئے ہیں

جب سے انگلینڈ جانے کی باتیں ہو رہی ہیں تب سے پاکستان کے کھلاڑیوں کا کرونا ٹیسٹ کا کھیل بھی شروع ہو چکا ہے کچھ کا کرونا ٹیسٹ نیگیٹو آ گیا اور کچھ کا پازیٹو – کچھ کھلاڑیوں نے اس کو من عن قبول کر لیا اور کچھ کھلاڑیوں نے اس ٹیسٹ کی تصدیق کرنے کے لیے ایک اور جگہ سے ٹیسٹ کروا لیا – جن ہاں ہم بات کر رہے محمّد حفیظ کی جنہوں نے اپنا پرائیویٹ ٹیسٹ کروا کر اس کی رپورٹ اپنے ٹویٹر پر لگا دی تھی

اب ہم بات کریں گے پاکستان کے مشھور وکٹ ٹیکر بولر شعیب اختر کی انہوں نے اب اس معامله میں انٹری کی اور ڈائریکٹ محمد حفیظ کو دبنگ انداز میں نصیحت کر دی ہے – شعیب اختر نے سب سے پہلے ہی یہ بات کر دی کہ محمّد حفیظ کو اپنی پرائیویٹ ٹیسٹ کی رپورٹ کو ٹویٹر پر نہیں لگانا چاہیے تھا بلکہ اس کی بجائے محمّد حفیظ کو اپنی وہ رپورٹ لیکر کرکٹ بورڈ کے آفس میں جانا چاہیے تھا اور ان سے بات کرنی چاہے تھی

بلکل یہی بات پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر انضمام الحق نے بھی کہی ہے انھوں نے اپنے یو ٹیوب چنیل میں یہ بات بڑے واضح الفاظ میں کہی ہے کہ محمّد حفیظ کا یہ رویہ بلکل بھی ٹھیک نہیں تھا اور ان کو اپنا سارا معامله پی سی بی کے آفس میںج کر میڈیکل یونٹ سے شیئر کرنا چاہیے تھا ناکہ اس کو سوشل میڈیا پر شیئر کرنا چاہیے تھا –

اگر ہم بات کریں شعیب اختر کی تو انھوں نے اپنے یو ٹیوب چینل میں بڑا واضح طور پر بتایا ہے کہ کہ اگر حفیظ اپنا ٹیسٹ دوبارہ کروانا چاہتا تھا تاکہ تو شوق سے کرواتا مگر اس کو اپنا ٹیسٹ کا نتیجہ سوشل میڈیا پر شیئر نہیں کرنا چاہیے تھا – بلکہ اس کو چاہیے تھا کہ وہ کرکٹ بورڈ کی میڈیکل یونٹ کے ساتھ جا کر بات کرتا اور اس مسلہ کو حل کرنے کی کوشش کرتا – اس کے بعد شعیب اختر نے مزید کہا کہ محمّد حفیظ کو کرکٹ بورڈ کے ساتھ ٹکر نہیں لینی چاہے یہ اس کے لیے اچھا نہیں ہو گا

مزید پڑھیں: کرکٹ بورڈ کی عزت خاک میں ملانے پر حفیظ کے ساتھ انوکھا سلوک

اس کے بعد شعیب اختر نے دورہ انگلینڈ کی اہمیت پر بھی زور دیا اور انھوں نے بتایا کہ دورہ انگلینڈ پاکستانی ٹیم کے لیے کبھی بھی آسان نہیں رہا ہے لہذا اس کے لیے پاکستان کرکٹ ٹیم کو پنے سب سے اچھے کھلاڑی اس دورہ پر لے کر جانا چاھیے – انھوں نے مزید کہا کہ پاکستان کو یہ سیریز جیتنے کی بہت اشد ضرورت ہے اور اگر پاکستان کرکٹ بورڈ نے اپنی آدھی ٹیم انگلینڈ میں بھیجی تو پھر نتیجہ بہت برا ہو گا – کیونکہ شعیب اختر نے کہا کہ وہ نہیں چاہتے کہ پاکستان کی ٹیم مزید ٹیسٹ رینکنگ میں نیچے چلی جائے

Mohammad Hafeez should have not spoken against Pakistan Cricket Board, says Shoaib Akhtar, former Pakistani fast bowler. We should not be in a fight with those who have to select us, Shoaib Akhtar.

Leave a Comment