fbpx
News

میرے لیے ویرات کوہلی کو آوٹ کرنا منٹوں کا کام ہوتا -وسیم اکرم

دنیاۓ کرکٹ میں اس وقت اگر کسی بیٹسمن کا ذکر صبح و شام ہو رہا ہے تو وہ اس وقت ویرات کوہلی ہے – انڈین تو اب اس کے نام کی عبادت تک کرنا شروع ہو چکے ہیں جیسے کسی دور میں یہ ٹنڈولکر کے لئے دیوانے تھے اب ویسے ہی یہ کوہلی کے لیے بھی دیوانے ہو چکے ہیں – اور اس میں کوئی شک بھی نہیں ہے کہ ویرات کوہلی واقعی ایک بہت ہی اچھا کھلاڑی ہے اور اس کے بارے میں نہ صرف انڈین بلکہ ساری دنیا سے یہ کمنٹ آ رہے ہیں کہ اس طرح کا کھلاڑی سالوں بعد پیدا ہوتا ہے

یعنی کہ بات کرنے کا مقصد یہ ہے کہ ویرات کوہلی واقعی ایک بہت ہی اچھا بیٹسمن ہے – جب بھی کبھی انڈیا کے اندر شعیب اختر یا پھر وسیم اکرم کا انٹرویو لیا جاتا تھا تو ان سے ہر دفعہ یہی سوال کیا جاتا تھا کہ اگر ان کے دور میں ویرات کوہلی ہوتا تو وہ اس کو کس طرح آوٹ کرنے کی کوشش کرتے مگر وہاں پر وسیم اکرم اور شعیب اختر عاجزی سے کام لے جاتے تھے اور بس کچھ ایسی بات کر دیتے تھے جس سے اینکر بھی اور پاس بیٹھے لوگ بھی خوش ہو جائیں

مگر کچھ دن پہلے شاید وسیم اکرم بھائی موڈ میں آئے ہوئے تھے تو انھوں نے اس دور کے بولرز کے لیے کوہلی کو آوٹ کرنے کا فارمولا بتا ہی دیا – وسیم اکرم بھائی نے کہا کہ اگر میں کوہلی کو بولنگ کروا رہا ہوتا تو میں کوہلی کو بولنگ کروانے کے دوران بہت زیادہ اپنی باتوں سے تنگ کرتا اور اس طرح میں کوہلی کو بہت جلدی آوٹ کر دیتا –

وسیم اکرم نے ایک انڈین اینکر کو ہی انٹرویو کے دوران بتایا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ ویرات کوہلی کی نسبت ٹنڈولکر کو آوٹ کرنا زیادہ مشکل ہوتا تھا – آکاش چوپڑا کو ان کے یو ٹیوب چینل پر انٹرویو دیتے ہوئے وسیم اکرم نے کہا کہ ٹنڈولکر ویرات کوہلی کی نسبت زیادہ پر سکون کھلاڑی تھا – وسیم اکرم نے کہا کہ ویرات کوہلی غصہ جلدی کر جاتا ہے اور ایسے کھلاڑی کو میرے لیے آوٹ کرنا کوئی مسئلہ نہیں ہوتا تھا

وسیم اکرم نے ہاں البتہ اگر اس کے مقابلے میں ٹنڈولکر آ جائے تو پھر مجھے اس سے زیادہ محنت کرنی پڑے گی کیونکہ ٹنڈولکر بہت ہی زیادہ ٹھنڈا بندہ تھا اور وہ کم ہی غصے میں آتا تھا – وسیم اکرم نے مزید کہا کہ اس مین بھی کوئی شک نہیں ہے کہ ویرات کوہی اس دور کا بہترین بیٹسمن ہے اور اس نے یقینا بڑے بڑے اچھے بولرز کا سامنا کیا ہے

مگر وسیم اکرم نے کہا کہ میرے نزدیک ٹنڈولکر کو آوٹ کرنا زیادہ مشکل کام تھا – مگر ایک بات تو سچ ہے کہ جس طرح کے بولرز کا سامنا ٹنڈولکر نے اپنے دور میں کیا ہے اس طرح کے خطرناک بولرز کا سامنا ابھی تک ویرات کوہلی نے نہیں کیا ہے – جیسے کہ اس وقت کوئی بھی بولر شعیب اختر جیسا تیز نہیں ہے اور نہ کوئی وسیم اکرم جیسی سوئنگ ڈیلیوری رکھتا ہے مگر ٹنڈولکر نے ان تمام گریٹ کھلاڑیوں کا مقابلہ کیا ہے

مزید پڑھیں: سابق انگلش ٹیم کے کپتان نے پاکستانی ٹیم کے بارے میں ایسی بات کر دی کہ خود انگلینڈ کے لوگ بھی حیران رہ گئے

مگر اس دور کی بات کریں تو اس کا واقعی کوئی مد مقابل نہیں ہے – ویرات کوہلی کی پرفارمنس دیکھی جائے تو اس نے صرف 6 8 میچز میں ہی 7 ہزار سے زیادہ رنز کر لیے ہیں اور اگر ہم ون ڈے کرکٹ کی بات کریں تو اس مین ویرات کوہلی کے 11 ہزار سے زیادہ رنز ہیں جوکہ واقعی قابل دید ہیں – اور اگر بات کریں تی ٹوینٹی میچز کی تو اس میں بھی ویرات کوہلی کے 27 سو سے زیادہ رنز ہیں جوکہ ایک بہت اچھی فگر ہے

Leave a Comment