fbpx
News ODI Cricket T20I Cricket Test Cricket

انگلینڈ ویسٹ انڈیز سیریز سے یہ 3 چیزیں سیکھ کر پاکستان ٹیسٹ سیریز جیت سکتا ہے

کرونا وائرس کے اس خطرناک دور میں ویسٹ انڈیز اور انگلینڈ سیریز کا ہونا یقینا ایک بہت بڑی بات ہے اور جب کہ انگلینڈ اس سیریز میں جیت چکا ہے اور انگلینڈ کی اس جیت کو پہلےسے ہی تصور کیا جا رہا تھا مگر پہلے ٹیسٹ میں ویسٹ انڈیز کی بہترین کارکردگی نے تمام ناقدین کے دانت کتھے کر دئیے  وہ سب تجزیہ نگار جو اس سیریز میں انگلینڈ کو فیورٹ قرار دے رہے تھے ویسٹ انڈیز کی یہ پرفارمنس دیکھ کر بہت زیادہ حیران رہ گئے اور پھر اگلے ٹیسٹ میچ میں تمام لوگوں نے بہت احتیاط سے اپنی اپنی آرا پیش کیں

مگر اس کے بعد انگلینڈ نے بہت اچھے طریقے سے کم بیک کیا اور باقی دونوں ٹیسٹ میچز میں انگلنڈ نے ویسٹ انڈیز کو ہرا دیا – ان ٹیسٹ میچز میں بہت ساری چیزیں ایسی ہوئی ہیں جوکہ انگلینڈ کے لیے بہت یادگار رہیں گی جیسے مثال کے طور پر بین سٹوک کا آل راؤنڈر پرفارمنس میں دنیا کا نمبر 1 کھلاڑی بننا اور پھر اس کے بعد بروڈ کا 0 0 5 وکٹس حاصل کرنا

اب ہم بات کریں گے آنے والی سیریز کے متعلق جس میں پاکستان اور انگلنڈ کی ٹیمیں ایک دوسرے کے مد مقابل ہونگی اور اس حوالے سے تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اگر ہم پچھلے ٹیسٹ میچز سے یہ 3 چیزیں سیکھ لیتے ہیں تو پھر ہمارے لیے یہ میچز جیتنا آسان ہو جائے گا – سب سے پہے انھوں نے کہا ہے کہ ببل کرکٹ ورک ہمارے لیے کام کر سکتا ہے

اس کا مطلب ہے بائیو سکیور ماحول ماحول ہم کو بہت اچھی کرکٹ مہییا کر سکتا ہے جس میں کرونا وائرس کا کسی بھی قسم کا ڈر نہیں ہو گا کیونکہ سٹڈیم میں تماشائیوں کے آنے کی بھی چانسز نہیں ہے لہذا ہم کو ایک بہت ہی اچھے لیول کی کرکٹ کھیلنے کو مل سکتی ہے –

اس کے بعد جو سب سے بڑا دوسرا مسلہ ہے کہ بولرز کو اس سیریز کے دوران اس چیز کا بہت زیادہ دھیان رکھنا پڑے گا کہ وہ کہیں بھول کر بھی گیند کو تھوک نہ لگا دیں کیونکہ اگر وہ ایسا کر دیتے ہیں تو پھر اس بولور پر پابندی لگ جائے گی اور اس چیز سے بھی بولرز بہت زیادہ پریشان ہیں -ہاں اگر بولر مسئلہ میں اپنا تھوک استعمال کرنے کی بجائے اپنا پسینہ استعمال کرنا شروع کر دیتے ہیں تو پھر بولرز بیٹسمنوں کے لیے مشکل کھڑی کر سکتے ہیں

مزید پڑھیں: تازہ ترین : یونس خان نے پاکستانی بیٹنگ کے حوالے سے بری خبر سنا دی

ہم اس چیز کی مثال اس بات سے دیتے ہیں کہ اگر آپ کے بولرز پسینہ کو استعمال کرنے کی ٹیکنیک نہیں سیکھ پاتے ہیں تو پھر بیٹسمن آپ پر حاوی ہو سکتے ہیں جیسے کہ انگلینڈ ٹیم کے بیسٹ آل راؤنڈر نے دوسرے ٹیسٹ میں بلترتیب6 7 1 اور 8 7 سکور کیے ہیں لہذا آپ بین سٹوک سے بولرز کو کھیلنے کا طریقہ سیکھ سکھتے ہیں اور دوسری طرف انگلینڈ کے ہی ایک بولر نے پسینہ کا استعمال کرتے ہوئے بہترین پرفارمنس دی اور 0 0 5 وکٹس پوری کیں ہیں اور اس بولر کا نام ہے سٹورٹ بروڈ

Leave a Comment