دوسرے ٹیسٹ کے تیسرے روز کیوں بیٹنگ کروانے کا چانس نہیں لیا گیا – ناصر حسین

دوستو جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ ان دونوں پاکستان کرکٹ ٹیم انگلینڈ کے دورہ پر ہے اور پاکستان کرکٹ ٹیم اپنا پہلا ٹیسٹ میچ ہار چکی ہے جوکہ ٹوٹل پاکستان کے حق میں ہو چکا تھا مگر ہمارے بولرز کی ناقص کارکردگی کہ لیں یا پھر انگلنڈ ٹیم کے بیٹسمنوں کی اچھی بیٹنگ که لیں مگر پاکستان یہ جیتا ہوا ٹسٹ میچ ہار چکا ہے – اب پاکستان اپنا دوسرا ٹیسٹ میچ کھیل رہا ہے جوکہ نہ کھیلنے کے مترادف ہو چکا ہے کیونکہ بارش کی وجہ سے ابتک صرف پاکستان کی ٹیم اپنی پہلی انننگز کی باری لے چکی ہے

اور انگلینڈ کی ٹیم نے اپنی باری شروع کی ہے اور اس کا ایک کھلاڑی بھی آوٹ ہو چکا ہے اور اس کے صرف 7 رنز بنے ہیں – جہاں تک بارش ہونے کی بات ہے وہ تو قدرت کا کام ہے مگر کچھ کام انسان کے اپنے ہاتھ میں بھی ہوتے ہیں – انگلنڈ ٹیم کے سابق کپتان ناصر حسین اس بارے میں کہتے ہیں کہ گراؤنڈ انتظامیہ نے ویسے کام نہیں کیا ہے جیسے اس کو کرنا چاہے تھا –

ناصر حسین نے بڑے واضع الفاظ میں کہا کہ میچ کے تیسرے روز میں نے گراؤنڈ میں صرف 2 آدمی کام کرتے ہوئے دیکھے ہیں لیکن وہاں پر ضرورت زیادہ لوگوں کی تھی تاکہ جلد از جلد بارش کے پانی کو وہاں سے نکالا جاتا اور میچ کو شروع کروایا جاتا مگر ایسا نہیں کیا گیا ہے – ناصر حسین نے اس بات پر سری لنکا کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ اگر ایسی صورتحال وہاں پر ہوتی

تو آپ دیکھتے کہ وہاں پر کتنے لوگ اس گراؤنڈ پر موجود ہوتے اور وہ بہت جلد اس تمام پانی کا یا کسی بھی مسئلہ کو منٹوں میں حل کر لیتے مگر ٹیسٹ کے تیسرے روز مجھے گراؤنڈ انتظامیہ کی طرف سے کسی خاص قسم کے رد عمل کا مظاہرہ نظر نہیں آیا جوکہ واقعی ایک تشویش کی بات ہے – ناصر حسین نے یہ بات ایک انٹرویو کے دوران کہی اور اس پر شدید احتجاج کیا ہے کہ ایسا کیوں ہوا ہے

ناصر حسین نے مزید کہا کہ ان کو امپائر کے ساتھ مکمل ہمدردی ہے کہ وہ قانون کو فالو کرنے پابند ہیں لہذا انہوں نے وہی کیا جس کا قانون ان کو کہتا تھا مگر گراؤنڈ انتظامیہ اور انگلنڈ کرکٹ بورڈ کی طرف سے اس میچ کو تیسرے دن بھی نہ کروانے کی ان کو سمجھ نہیں آئی ہے اور اگر اس دونوں مل کر تھوڑی سی بھی کوشش کرتے تو میچ شروع ہو سکتا تھا

 

اس کے ساتھ ساتھ ناصر حسین اور انگلش ٹیم کے سابق وکٹ کیپر بھی اس بات پر بہت زیادہ ناراض نظر آ رہے ہیں کہ میچ کو شروع کروانے کے لیے اس قسم کی کوشش نہیں کی گئی جس طرح کی ہونی چاہے – دوستوں یہاں پر ایک بات کی سمجھ آتی ہے کہ کہ ہو سکتا ہے کہ ایسا جان بوجھ کر کیا گیا کہ اس طرح یا تو انگلینڈ ٹیسٹ سیریز جیت جائے گا یا پھر ٹیسٹ سیریز برابر ہو جائے گی

مزید پڑھیں: اس کو تو کھڑا ہونا نہیں آتا ہے بیٹنگ یہ خاک کرے گا

کیونکہ انگلش ٹیم کے سابق کپتان پہلے ہی که چکے ہیں اس سیریز میں محممد عباس بہت خطرناک بولر ثابت ہونگے اور اب اگر اس ٹیسٹ کو ڈرا کروا لیا جائے تو پھر پاکستان کے پاس اس سیریز کو برابر کرنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے – اب دوسرا ٹیسٹ تو ڈرا ہو جائے گا اور پھر پاکستان تیسرا ٹیسٹ جیت بھی لے تو اس کا کوئی فرق نہیں پڑے گا کیونکہ سیریز برابر ہو جائے گی

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *