کرکٹ کی دنیا کے 10 تیزترین باؤلرز

ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے کامیاب گیندباز گلین مک گراتھ کو مانا جاتا ہے۔تاہم،وہ 10تیز ترین باؤلرز میں شامل نہیں ہیں۔ اس لسٹ میں ہم آپ کو ان باؤلرز سے ملوائیں گے جن کو دنیا ئے کرکٹ میں ان کی تیز گیندبازی کی وجہ سے شہرت حاصل ہے۔ کلو میٹر فی گھنٹہ) 156.410۔شین بانڈ(تیز ترین بال: نیوزی لینڈ سےتعلق رکھنے والے تیزترین باؤلر نا قابل یقین صلاحیت کے مالک تھے جنہوں نےاپنی سپیڈ کی وجہ سے اپنےکرئیرکے شروع میں ہی لوگوں کی توجہ حاصل کر لی ۔ مگر بانڈ بہت سی انجریز کے باعث اپنے کیرئر کو زیادہ عرصہ جاری نہ رکھ سکے۔بہت سارے بلے باز ان کو اپنے لئے خطرہ سمجھتے تھے۔ شین نے 156.4 کلومیٹرفی گھنٹہ کی رفتار سے گیند کروائی تھی –

ورلڈکپ  3 0 0 2 میں اپنی تیز ترین بال کروائی۔جس کی رفتار کلو میٹر فی گھنٹہ156.49 تھی – محمد سمیع پاکستان کے دوسرے تیز ترین باؤلر ہیں۔انہوں نے اپنےکرئیر کے آغاز میں ہی کافی شہرت حاصل کر لی تھی،لیکن اپنی بری فارم اور انجریز کی وجہ ان کا بین الا قوامی کریئر جلد ختم ہو گیا ۔ ان کی تیز ترین بال  156.4کلو میٹر فی گھنٹہ تھی جوکہ انہوں نے اپریل 2003میں زمبابوے کے خلاف کروائی تھی

 مچل جانسن آسٹریلیا کے تیز ترین باؤلر ہیں۔جانسن کا ریکارڈ تمام ٹیمز کے خلاف کچھ زیادہ اچھا نہیں ہے ، تاہم انگلینڈ کےخلاف ان کا باؤلنگ ریکارڈ کافی اچھا ہے۔ان کی تیز ترین بال بھی انگلینڈ کےخلاف ہےجو کہ  156.8کلومیٹر فی گھنٹہ ہے- فڈل ایڈورڈز ویسٹ انڈیز کے دوسرے تیز ترین گیندبا ز ہیں۔ان کی تیز ترین بال 2003 میں ساؤتھ افریقہ کے خلاف ہے جوکہ 7 . 7 5 1 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔ان کا شمار اپنے دور کے تیز ترین باؤلرز میں ہوتا ہے

اینڈی روبرٹس یہ بھی ویسٹ انڈیز سے تعلق رکھنے والے اپنے زمانے کے تیز رفتار باؤلر ہیں۔انہوں نے اپنی تیز ترین بال1975میں  5 . 9 5 1 کلو میٹر فی گھنٹہ  کی رفتار سے کروائی تھی-  یہ گیند انھوں نے پرتھ کے مقام پر آسٹریلیا کے خلاف کھیلتے ہوئے کروائی  تھی

۔مچل سٹارک: نیوزی لینڈکےخلاف واکا کے مقام پردوسرےٹیسٹ میچ میں تیز ترین بال پھینکنےوالےباؤلر مچل سٹارک ہیں۔روس ٹیلر کو اس یارکر کا  سامناکرناپڑا جس کی رفتار 160.45 فی کلو میٹر تھی ۔جو ٹیسٹ کرکٹ کی دوسری تیزترین ڈلیوری ہے۔تیز باؤلنگ اور یارکرز کو سونگ کرنےوالےسٹارک خود کوتیزترین باؤلر سمجھتےتھے لیکن وہ ٹیسٹ کے تیز ترین باؤلر ہیں نہ ہی آسٹریلیاکے تیزترین باؤلر ہیں بلکہ اس کا اعزازاس لسٹ میں آگےموجود آسٹریلیا کے باؤلز کو حاصل ہے۔

سٹریلیا کے لیجنڈری فاسٹ باؤلر جیف تھامس اپنی شاندارتیز رفتاری کے باعث مشہور تھے۔وہ اپنے دور کے تیز ترین باؤلر تھے۔ انھوں نے اپنی تیز گیند 1975میں پرتھ کے مقام پرویسٹ انڈیز کے خلاف کھیلتےہوئے کروائی جس کی سپیڈ  160.64کلومیٹر فی  گھنٹہ تھی  ۔ شان  ٹیٹ نے 2007میں اپنے کرئیر کا آغاز کیااور جلد ہی اپنی زبر دست تیز باؤلنگ کی وجہ سے شہرت حاصل کر لی۔لیکن صرف 4 سال بعد2011میں جب ان کی عمر 28 سال تھی انہوں نے ایجریز کے باعث کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لی۔ شان ٹیٹ نے اپنی تیز ترین گیند  3 1 . 1 6 1 کلومیٹر فی گھنٹہ رفتار سے کروائی تھی

بریٹ لی کو اب تک کے بہترین فاسٹ باؤلر ز میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔وہ حیرت انگیز رفتار کے مالک اور بہت زیادہ وکٹ لینے والے باؤلر تھے۔دوسرے آسٹریلوی باؤلرز کے برعکس انہوں نے لمبے عرصے تک کر کٹ کھیلی۔  لی نے 161.8 فی کلو میٹر کی سپیڈ سے تیز ترین گیند 2003میں برسبین کے مقام پر ویسٹ انڈیز کے خلاف تھی۔مگر بعد میں اس بات کا پتہ چلا کہ یہ ریکارڈنگ ایک غلطی تھی تاہم چینل نائن نے بعد میں اصلاح کے ساتھ کہا کہ  161.1کلومیٹر فی گھنٹہ ہےجو نیوزی لینڈ کے خلاف2005 میں ریکارڈکی گئی –

راولپنڈی ایکسپریس ‘ کے نام سے مشہورباؤلر شعیب اختر دنیا کے تیز ترین باؤلرہیں۔انہوں نے 2003 کے ورلڈکپ میں انگلینڈ کی ٹیم کے خلاف 3 . 1 6 1 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گیند کروا کر ایک ریکارڈ قائم کیا اور یہ ابتک دنیا کی تیز ترین گیند ہے اور دنیا کا کوئی بھی بولر ابتک اس سے زیادہ تیز گیند بازی نہیں کر سکا ہے تھی- شعیب اخترکی اوسط رفتار 145سے 150 کلومیٹر فی گھنٹہ  ہوتی تھی۔

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *