دنیا کرکٹ میں وہ پانچ بیٹسمن جو کہ 0 9 2 سکور پر آوٹ ہوئے

دوستو آج ہم آپ سے ان بد نصیب بیٹسمینوں کا ذکر کریں گے جوکہ اپنی ٹرپل سنچریاں کرتے کرتے رہ گئے – ویسے تو دوستو انٹرنیشنل کرکٹ میں ایک سنگل سنچری کرنا بھی بہت جوکوں کا کام ہے مگر کرکٹ کی دنیا مین کچھ ایسے اچھے بیٹسمن بھی ہیں جنہوں نے خوب محنت کر کے یہ مقام حاصل کیا ہے کہ وہ ٹرپل سنچریاں کرنے تک بھی پہنچ گئے – تو چلے دوستو ہم آپ کو بتاتے ان چند قسمت اور یہ بھی کہ سکتے ہیں کہ بد قسمت کھلاڑیوں کے بارے میں اور سب سے پہلے ہم بات کریں گے ویسٹ انڈیز کے کھلاڑی کی

1-رامنریش سروان

سروان ویسٹ انڈیا کے کھلاڑی ہیں اور یہ انگلینڈ کے خلاف ایک سیریز میں بہت اچھا کھیل رہے تھے اور وہ اس وقت اپنے کیریئر کی سب سے بہترین فارم میں تھے – اس میچ سے پہلے سروان پہلے ہی اپنے کیریئر میں  4 9 6 0 1 رنز کر چکے تھے اور اس سے پہلے 3 انننگز میں وہ 7 0 1 سکور کر چکے تھے -اس وقت وہ انگلینڈ کے ساتھ اپنا 4 ٹیسٹ میچ کھیل رہے تھے اور ویسے بھی وہ 0 – 1 کی برتری کے ساتھ کھیل رہے تھے

اس میچ کے دوران سروان نے سب سے پہلے چندرپال کے ساتھ اپنی پارٹنرشپ لگائی اور پھر اس کے بعد اس نے رامدین کے ساتھ ملکر 6 6 1 سکور کیے پھر اس نے اپنا 1 9 2 سکور کیا تو پھر وہ سائیڈ باٹم کی گیند پر بولڈ ہو گیا اور یہاں پر اس کی یہ تاریخی انننگز ختم ہو گئے

2- سر ویوین رچرڈ

اگر ہم بات کریں سر ویوین رچرڈ کی تووہ اس وقت اپنے کیریئر کے عروج پر تھے اور ہم بات کر رہے ہیں 6 7 9 1 کی اور وہ اس وقت انگلینڈ کے خلاف سیریز کھیل رہے تھے اور انھوں نے اس سے پہلے 2 ٹیسٹ متچوں میں بھی بہت اچھا سکور کیا تھا جن میں ایک میں ڈبل سنچری سکور تھا اور ایک مین ففٹی کی تھی اور اس کے بعد ایک انننگز میں 5 3 1 سکور کیا تھا اور اسی میچ کی دوسری انننگز میں پھر ففٹی کی تھی اور اس دفعہ آخری ٹیسٹ میچ میں ان کی یہ فارم اپنے عروج تک پہنچ چکی تھی اور انھوں نے اس ٹیسٹ میچ میں 1 9 2 سکور مار دیا مگر پھر قسمت کی دیوی ان پر مہربان نہ ہوئی اور وہ اس نمبر پر آوٹ ہو گئے اور ٹرپل سنچری سکور نہ کر سکے

3-وریندر سہواگ

اس کے بعد ہم بات کریں گے پاکستان کے روایتی حریف انڈیا کے بیٹسمن سہواگ کی – انھوں نے پاکستان کے خلاف ہی 3 9 3 سکور کیے تھے – ہم سے بہت سے لوگ ایسے بھی ہوں گے جن کو سہواگ کی ٹرپل سنچری تو ضرور یاد ہو گی مگر ان کو شاید یہ نہ یاد ہو کہ وہ ایک دفعہ پہلے بھی ٹرپل سنچری کے پاس سے ہو کر آئے تھے – سہواگ یہ میچ سری لنکا کے خلاف کھیل رہے تھے اور انھوں نے اس میچ میں بھی بہت اچھے طریقے سے بیٹنگ کی اور 4 8 2 سکور تک پہنچے تو پھر دن ختم ہو گیا اور پھر اگلے دن کھیل دوبارہ شروع ہوا – مگر جیسے ہی انڈیا کی دوبارہ اننگز سٹارٹ ہوئے تو یہ سہواگ کے لیے بہتر نہیں تھی اور سہواگ اس دفعہ صرف 9 رنز اور اضافہ کر سکے اور 3 9 2 رنز پر آوٹ ہو گئے

4- السٹر کوک

اس کے بعد ہم بات کریں گے انگلینڈ کے کھلاڑی السٹر کوکک کی جوکہ اپنے وقت کے ایک بہت ہی اچھے بیٹسمن رہے ہیں اور انھوں نے شاید ہی کوئی بولر ہو گا جس کی دھلائی نہ کی ہو – السٹر کوک نے اپنا یہ سکور جوکہ 4 9 2 تھا انڈیا کے خلاف کیا مگر بعد قسمتی سے یہ بھی اس نمبر کو آگے لے جانے میں   ناکام رہے اور یہاں پر آپ کو ایک بات بتاتے جائیں کہ اگر کوک یہ نمبر پورا کر لیتے تو پھر وہ ٹرپل سنچری کرنے والے چھٹے انگلینڈ کے کھلاڑی ہوتے

5-مارٹن کرو

اس کے بعد ہم بات کریں گے مارٹن کرو کی جوکہ نیوزی لینڈ کے کپتان بھی رہ چکے ہیں اور یہ انہی کی شاندار کپتانی تھی جس کی وجہ سے نیوزی لینڈ 2 9 9 1 میں بہت اچھی پرفارمنس دے چکا تھا – اس وقت نیوزی لینڈ کی ٹیم بھات اچھی تھی اور مارٹن کرو نے اس دفعہ ایک بیان دیا تھا کہ اگر اس دفعہ ہم ورلڈ کپ نہ جیت سکے تو پھر شاید ہم کبھی بھی نہ جیت پائیں اور واقعی نیوزی لینڈ اس کے بعد 2 دفعہ ورلڈ کپ فائنل مین آ چکا ہے مگر وہ ورلڈ کپ نہیں جیت سکا

اگر ہم بات کریں ان کی بہترین انننگز جس مین انھوں نے 9 9 2 سکور کیا تھا – انھوں نے یہ سکور سری لنکا کی ٹیم کے خلاف کیا اور سب سے بڑی بات یہ ہے کہ یہ سکور ٹیسٹ میچ میں دوسری انننگز میں کیا تھا – لیکن مارٹن اپنی ٹرپل سنچری مکمل نہ کر سکے اور رانا ٹنگا کی گیند پر کیچ آوٹ ہو گئے

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *