عامر کے کیے گئے فیصلے کے حق میں وسیم اکرم بھی میدان میں آ گئے

اگر ہم محمّد عامر کی بات کریں تو جہاں وہ ایک طرح سے بہت خوش نصیب انسان سمجھے جاتے تھے اسی ٹائم پر ان کو بد نصیب انسان بھی سمجھا جا رہا ہے – اگر ہم تھوڑی سی تفصیل سے بات کریں تو یہ وہی محمّد عامر ہیں کہ جب انہوں نے انٹرنیشنل کرکٹ مین قدم رکھا تھا تو پوری دنیاۓ کرکٹ مین ایک بھونچال آ گیا تھا دنیاۓ کرکٹ کے تمام بیٹسمن ان کے نام سے خوف کھاتے تھے

خود عمران خان کا یہ کہنا تھا کہ جس قدر محمّد عامر تلنٹڈ ہے اس طرح کا تلنٹڈ اور ینگ کھلاڑی میں نے آج تک نہیں دیکھا ہے – جیسے ہی محمّد عامر انٹرنیشنل کرکٹ میں نمودار ہوئے تو تمام دنے کے بڑے بڑے کرکٹرز نے ان کو وسیم اکرم سے تسبیح دینی شروع کر دی اور خود عمران خان نے تو یہاں تک کہ دیا تھا کہ جب وسیم اکرم نیا نیا انٹرنیشنل کرکٹ مین آیا تھا تو وہ بھی اس قدر تلنٹڈ نہیں تھا

مطلب صاف ظاہر ہے کہ محمّد عامر کو قدرت نے بہت ساری خوبیوں سے نوازا ہوا تھا اور اس نے آتے ہی بڑے بڑے بیٹسمنوں کے چھکے چھڑا دئیے تھے -رکی پونٹنگ جیسے بیٹسمن بھی عامر کے سامنے ڈھیر ہونے مین منٹ نہیں لگاتے تھے مگر پھر کچھ ایسا ہوا کہ محمّد عامر کے برے دن شروع ہو گئے اور محمّد عامر کو برے لوگوں کی صحبت نے برباد کر دیا اور اس پر 5 سال کی پابندی لگ گئی

آج کل محمّد عامر پر اس بات کا بہت زیادہ پریشر ہے کہ اس نے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کیوں لی ہے – اگر ہم شعیب اختر کی بات کریں تو انھوں نے تو باقاعدہ پورا ایک پروگرام محمّد عامر پر کر دیا ہے جس میں شعیب اختر نے مختلف حوالوں سے محمّد عامر کو یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ اس ملک اور قوم کا اس پر قرضہ ہے اگر وہ چاہتا ہے کہ وہ اس قرض کو اتارے تو پھر اس کو اپنا ریٹائرمنٹ کا فیصلہ واپس لینا چاہیے

مگر سوئنگ کے سلطان کا بھی ٹویٹ آ گیا ہے جوکہ بلکل سیدھا سیدھا محمّد عامر کے حق میں ہے اور اس میں ہے جس مین وسیم اکرم نے کہا ہے کہ آپ محمّد عامر کو اس کے فیصلے پر چھوڑ دیں اور یہ اس کا اپنا فیصلہ ہے اور کوئی بھی اس کو اپنے اس فیصلے سے منحرف ہونے پر مجبور نہیں کر سکتا ہے – انھوں نے مزید کہا کہ وہ خود ایک میچور انسان ہے اور اس کو اپنے اچھے اور برے کا بخوبی اندازہ ہے

وسیم اکرم نے بہت سیدھے سیدھے الفاظ مین کہا کہ ہم سب کو محمّد عامر کے اس فیصلے کی عزت کرنی چاہے کیونکہ وسیم اکرم اس پر یقین رکھتے ہیں کہ اس نے یہ فیصلہ بہت زیادہ سوچ بچار کے ساتھ کیا ہے لہذا ہمیں کسی کو بھی یہ حق نہیں پہنچتا ہے کہ ہم اس پر کسی بھی قسم کا دباؤ ڈالیں -وسیم اکرم نے مزید کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ اتنی آسان نہیں ہے جتنی عام لوگ سمجھتے ہیں

وسیم اکرم نے کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے کے لیے انسان کو بہت زیادہ دماغی اور جسمانی قوت درکار ہوتی ہے اگر انسان کے اندر ان دونوں مین سے کسی ایک کی بھی کمی ہو تو پھر کوئی بھی کرکٹر ٹیسٹ کرکٹ نہیں کھیل سکتا ہے – وسیم اکرم نے کہا کہ وہ ایک ایماندار اور سچا انسان ہے یہی وجہ ہے کہ اس نے لوگوں کو یا پھر یہ نہیں دیکھا کہ کہیں اس کا کیریئر ختم نہ ہو جائے اس نے وہ  فیصلہ کیا جو اس کو اپنے حق مین بہتر لگا

اگر ہم وسیم اکرم کی بات کریں تو وہ ہمیشہ سے ہی محمّد عامر کے بہت بڑے سپورٹر رہ چکے ہیں اور انھوں نے ہمیشہ محمّد عامر کے لیے ایک منٹور کا کام کیا ہے اور ہمیشہ ہی اس کی حوصلہ افزائی کی ہے جیسا کہ ہم نے شروع مین ہی بتایا ہے کہ محمّد عامر نے اپنے کرکٹ کے کیریئر میں عروج بہت کم دیکھا اور مصیبتیں بہت زیادہ دیکھ چکے ہیں

اور دوسری بات کہ ان کی عمر بھی اتنی زیادہ نہیں ہے جس کی وجہ ے پوری دنیا مین ان کے لئے ہمدردی کے ووٹ مل جاتے ہیں اور ان کی کم عمری کی وجہ سے ہی ان کو سزا بھی کم ملی تھی مگر افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ محمّد عامر جس قدر ایک تلنٹڈ کھلاڑی تھے اور وہ جس تیزی کے ساتھ انٹرنیشنل کرکٹ میں وقار بنا رہے تھے

مزید پڑھیں: محمّد یوسف اور انکی بیوی مکّہ میں پہلی بار کیا دیکھ کر رونا شروع ہو گئے

محمّد عامر کو بڑی پلاننگ کے ساتھ اسی تیزی کے ساتھ نیچے گرا دیا گیا اور ان کے ساتھ ایک اور بولر تھے جن کا نام تھا محمّد آصف – جس کے بارے مین عمران خان نے کہا تھا کہ انھوں نے ان سے بہتر نئی گیند کروانے والا کوئی بھی بولر آج تک نہیں دیکھا ہے مگر وہ بھی دشمنوں کے شکنجے مین ایسے آئے کہ پھر انٹرنیشنل کرکٹ ان کے لیے ایک خواب بن گئی

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *