Breaking News: Illegal activities may increase due to Corona Virus

بریکنگ نیوز: انٹیلی جنس ایجنسیز کے مطابق کرونا وائرس کی وجہ سے پوری دنیا میں ہونے والی کھیلوں کے یونٹ میں میچ فکسنگ کے واقعات میں اضافہ ہو سکتا ہے – اس بات کا اظہار عالمی سپورٹ باڈیز کو غیر قانونی معاملات کو روکنے میں مدد کرنے والے ادارے کے ڈائریکٹر نے یہ بات بتائی ہے اور وہ اس بات پر پورے متفق ہیں کہ اس کے ہونے کے پورے پورے چانسز ہیں

اس ادارے کے ڈائریکٹر کا نام آسکر برودکن ہے اور وہ ڈائریکٹر انٹیلی جنس کے ساتھ ساتھ انویسٹیگیشن کا ہیڈ بھی ہے اور  یہی این ایف ایل ، ایم ایل بی ، فیفا اور ورلڈ  رگبی جیسے سپورٹس اداروں کو ان میں ہونے کھیلوں کے متعلق شفاف معلومات فراہم بھی کرتا ہے

اس ادارے نے مزید کہا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے جو معاشی صورتحال پیدا ہو چکی ہے اس سے نہ صرف امیر لوگ بلکہ ان کھیلوں کے اداروں میں موجود غریب کام کرنے والی بھی بہت مشکل کا شکار ہیں – اس کے علاوہ اس بات کا بھی انکشاف ہوا ہے کہ کئی ملکوں کے سپورٹس باڈیز میں کھلاڑیوں کو ان کی تنخوائیں بھی نہیں ملی ہیں اور اگر کسی کو مل بھی گئی ہیں تو اس میں بھی کچھ نہ کچھ کٹوتی کی گئی ہے

اس ادارے کے سربراہ نے تمام کھیلوں کے یونٹ کو اس بات سے آغا کر دیا ہے کہ جیسے ہی کھیلوں کا آغاز دوبارہ ہو گا ویسے ہی ایسے عناصر ان تمام لوگوں کو اپنا ٹارگٹ بنائے گے جو کہ کرونا کی وجہ سے بد حالی کا شکار ہوئے ہیں اور ایسے لوگ بہت جلدی ان لوگوں کے ہاتھوں بک جائیں گے – اس کے ساتھ ساتھ انھوں نے یہ بھی بتایا ہے کہ غریب ملکوں میں میچ فکسنگ ہونے کے چانسز امیر ملکوں کی نسبت زیادہ ہیں

اس ادارے کے ڈائریکٹر نے یہ بھی بتایا ہے کہ اس حوالے سے مختلف ممالک میں بکیز نے اپنا کام کرنا شروع کر دیا ہے اور وہ اس حوالے سے پورے منظم بھی ہو چکے ہیں انھوں نے مزید یہ بات بھی شیئر کی ہے کہ میچ فکسنگ ہونے ایک وجہ کم تنخواہ اور اس کے ساتھ ساتھ بے روزگاری بھی ہے

انھوں نے اس بات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ جس ادارے میں ملازمین کی تنخواہ کم ہوتی ہے وہاں پر ملازمین کے اندر اپنے ادارے کے خلاف ایک نفرت بڑھتی ہے اور وہ آہستہ آہستہ اس قدر زیادہ ہو جاتی ہے کہ پھر ان کیلیے ادارے کی عزت کوئی معنی نہیں رکھتی ہے اور وہ پھر غیر قانونی کام کے ذریعے پیسے کمانے کو جائز سمجھتے ہیں اور بہت سارے ممالک میں میچ فکسنگ ایسے ہی ہوتی ہے

اس حوالے سے بات کرتے ہوئے انھوں نے آئی سی سی کو بھی چکنا ہونے کا کہ دیا ہے اور اس حوالے سے انھوں نے تمام کرکٹرز اور ٹیم مینجمنٹ کو ان تمام خطرات سے نمٹنے کے لیے تیار رہنے کا کہ دیا ہے اور انھوں نے سپاٹ فکسنگ کے حوالے سے بہت زیادہ محتاط رہنے کا کہ دیا ہے

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *