بریکنگ نیوز: ہربھجن نے چائنہ کے ساتھ دشمنی میں ہر حد کراس کر گئے

بریکنگ نیوز: ہربھجن سنگھ چائنا کے ساتھ دشمنی میں ہر حد کرس کر گئے اور چائنہ پر ایسا الزام لگا دیا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا – میرے عزیز قائرین اس بات سے تو آپ بخوبی آغا ہیں کہ آجکل انڈیا اور چائنہ کے درمیان بڑی شدید قسم کی لڑائی چل رہی ہے – پچھلے دنوں چائنا نے انڈیا کے تقریبا 20 فوجی مار دئیے تھے اور اس کے بعد یہ تنازع حل ہوتا ہوا نظر نہیں آ رہا ہے

یہ بات یہاں تک ختم نہیں ہو رہی ہے بلکہ یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ انڈیا میں چائنا کی تمام مصنوعات کا بائیکاٹ کیا جائے اور اس پر باقاعدہ لوگوں کو قائل بھی کیا جا رہا ہے – یہی نہیں بلکہ انڈین حکومت یہاں تک سوچ رہی ہے اور بھی جتنے بڑے بڑے معاہدے چائنا کے ساتھ ہوئے ہیں ان کو بھی ختم کر دیا جائے – مثال کے طور پر چائنہ کی موبائل فون کمپنی کا ایک بہت بڑا معاہدہ آئی پی ایل کے ساتھ بھی ہے

تو پی سی سی آئی نے آئی پی ایل آفیشلز کو یہاں تک کہ دیا کہ اس کو کوئی اور راستہ نکالا جائے تاکہ آئی پی ایل کے ساتھ کیا ہوا چائنہ کمپنی کا معاہدہ ختم کی جا سکے – یہی نہیں بلکہ اور بھی چھوٹے چھوٹے کئی اور انڈیا کی مختلف کمپنیوں کے ساتھ چائنہ کے معاہدے ہیں وہ سب ختم ہونے جا رہے ہیں – اور ہو سکتا ہے کہ چائنہ کا ایک بھی آوٹ لٹ انڈیا میں نہ رہے

ابھی یہ بات ختم نہیں  ہوئی تھی کہ ہربھجن سنگھ نے یہ نیا ایشو کھول دیا ہے اور اس نے چائنہ پر ایک ایسا الزام لگا دیا ہے جس کا کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا تھا – ہربھجن کے مطابق ساری دنیا پہلے ہی ایک بہت خطرناک بیماری سے لڑ رہی ہے اور ابھی تک اس کی کوئی دوائی بھی نہیں ایجاد ہو سکی ہے اس بیماری کا نام ہے کرونا وائرس – اس بیماری کی وجہ سے ساری دنیا تباہی کے دھانے پر پہنچ چکی ہے

اور اب ہربھجن سنگ نے چائنہ پر الزام لگایا ہے کہ چائنہ اب ایک اور وائرس اس طرز کا بنا رہا ہے تاکہ وہ پوری دنیا میں اس کو پھیلا سکے – اس نے یہ بھی کہا ہے کہ چائنہ یہ وائرس سور کی مدد سے بنا رہا ہے – ہربھجن سنگھ نے کہا ہے کہ سائنس دنوں کے مطابق یہ وائرس جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہو سکتا ہے اور اس وائرس 9 0 0 2 کے وقت پھیلنے والے سوائن فلو کی طرح کا ہے مگر اس سے زیادہ خطرناک ہے اور اس کی وکسین ابھی مارکیٹ میں نہیں آئی ہے

ہربھجن سنگھ نے مزید کہا ہے کہ پہلے چائنہ پر یہ الزام ہے کہ اس نے کرونا وائرس پھیلانے میں اھم کردار ادا کیا ہے جوکہ چائنہ کے ایک شہر ووہان سے پھیلا ہے – اور اس کے علاوہ یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ چائنہ نے ورلڈ ہیلتھ کے ساتھ کرونا وائرس کے بارے میں اھم معلومات شیئر بھی نہیں کی ہے جس کی وجہ سے کرونا وائرس ساری دنیا میں پھیل گیا ہے

مزید پڑھیں: پاکستانی کرونا ٹیسٹ بے معنی قرار!انگلینڈ نے پاکستانی کھلاڑیوں کا کرونا ٹیسٹ دوبارہ کروا دیا

ہربھجن سنگ نے آخر میں پھر ایک دفعہ کہا ہے کہ پہلے ہی دنیا کرونا وائرس کی وجہ سے مر رہ ہے اور اب چائنہ اسی طرح کی ایک اور وبائی مرض پر کام کر رہا ہے تاکہ وہ اس کو دنیا میں پھیلا سکے – ہربھجن سنگھ کے اس الزام پر چائنہ ابھی تک خاموش اور امید کی جا رہی ہے کہ چائنہ بہت جلد اس کا الزام کا ہربھجن سنگ کو بہت اچھے طریقے سے جواب دیگا

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *