دنیا میں موجود وہ کونسا بولر ہے جو شعیب پر بازی لے جائیگا

کرکٹ کی دنیا میں جب بھی فاسٹ بولنگ کا نام لیا جائے گا وہ گفتگو شعیب اختر کا نام لیے بغیر مکمل نہیں ہو سکتی- کیا آپ کو جانتے ہیں دنیا کے اندر چند ایک ہی ایسے ممالک ہیں جہاں پر فاسٹ بولر پیدا ہوتے ہیں جن میں پاکستان کا بھی ایک نام ہے – ایک وقت تھا جب ویسٹ انڈیز کے فاسٹ بولرز بہت مشھور ہوا کرتے تھے مگر ان کے ساتھ ساتھ پاکستانی بولرز اس دور میں بھی اپنا ایک نام رکھتے تھے

مگر اس دور کے بعد پاکستانی بولرز کا عروج پوری دنیا نے دیکھا جس میں ٹو ڈبلیو کی جوڑی بہت مشھور ہوئی تھی جی ہاں آپ یقینا جاننا چاہتے ہوں گے کہ یہ ٹو ڈبلیوز کون ہے ہمارے وہ قائرین جن کی عمریں 18 سال سے کم ہیں ہو سکتا ہے کہ ان کو نہ پتہ ہو تو دوستو وسیم اکرم اور وقار یونس کو ٹو ڈبلیوز کا نام دیا گیا تھا

جب یہ دونوں بولرز اپنا سپیل کروانے آتے تھے تو بڑے بڑے کھلاڑیوں کی ٹانگیں کانپنا شروع ہو جاتی تھی – ان دونوں فاسٹ بولرز نے مل کر بہت سارے ہارے ہوئے میچز پاکستان کے نام کیے ہوئے اور اس کے بعد سونے پر سوہاگہ ٹیب ہوا جب اس کھیپ کے اندر ہمارے دنیا کے تیز ترین بولر شعیب اختر کا اضافہ ہوا –

شعیب اختر نے کرکٹ میں آتے ہی دنیا کے تمام بہترین بتسمینوں پر اپنی دھاگ بٹھا دی تھی -پہلے 4-3 سالوں میں  شعیب آخر کو کوئی بھی بیٹسمین کھل کر نہیں کھیل سکا تھا -دنیا میں سب سے تیز ترین گیند کروانے کا اعزاز بھی شعیب بھائی کے پاس ہے -ایک انٹرویو کے دوران شعیب اختر سے پوچھا گیا کہ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ مستقبل قریب دور یا مستقبل قریب میں کوئی فاسٹ بولر آپ کا ریکارڈ توڑ سکے گا

مزید پڑھیں: انڈین کرکٹ بورڈ کی ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ کو انڈیا منتقل کرنے کی شازشیں شروع

تو شعیب اختر نے بغیر کسی وقفے سے ایک پاکستانی بولر کا نام لے ڈالا – جی ہاں دوستو انہوں نے ہمارے نئے آنے والے ینگ فاسٹ بولر نسیم شاہ کا نام لیا ہے اور انہوں نے کہا ہے اگر نسیم شاہ نے محنت کی تو ان کے لیے یہ ٹارگٹ بہت مشکل نہیں ہے -شعیب اختر ایک بہت ہی سیدھی بات کرنے والے انسان ہیں اور انہوں نے کبھی بھی کسی سے حسد نہیں کیا ہے

یہی وجہ ہے کہ آج وہ پوری دنیا میں ایک ہر دل عزیز شخصیت بنے ہوئے ہیں -ہماری پوری قوم ان کو سننا چاہتی ہے اور یہی نہیں پڑوس ممالک میں بھی ان کی رائے کو ایک خاص اہمیت دی جاتی ہے اور ان کی کوشش ہوتی ہے کہ وہ شعیب اختر کو اپنے پروگرام کا حصہ بنائیں –

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *