بابر اعظم اور ویرات کوہلی کا کوئی موازنہ نہیں

بابر اعظم اور ویرات کوہلی کا کوئی موازانہ نہیں ہے – جی ہاں یہ کہنا ہے سابق پاکستانی کپتان ورلڈ ٹی ٹوینٹی کپ جیتنے والے انسان یونس خان کا – انہوں کا کہنا ہے کہ اگر ہم لوگ 5 سالہ تجربہ کار بابر اعظم کا موازنہ 31 سالہ ویرات کوہلی کے ساتھ کرنا شروع کر دینگے تو اس طرح پھر ہم بابر اعظم کے ساتھ زیادتی کر دینگے

یونس خان نے اپنی بات کو سپورٹ دیتے ہوئے اپنی بات کو مزید لمبا کیا اور اس کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ ہم کس طرح 31 سالہ ویرات کوہلی کا مقابلہ بابر اعظم سے کر سکتے ہیں جو کہ 10 سالہ انٹرنیشنل کرکٹ کا تجربہ رکھتا ہے اور اس کے علاوہ ویرات کوہلی نے ابتک 70 انٹرنیشنل  سنچریاں بنائی ہیں  جوکہ ایک بہت ہی زبردست کارکردگی ہے -اور بیشک ویرات کوہلی اس وقت اپنے کیریئر کے عروج پر ہے

یونس خان نے مزید کہا کہ اس وقت بابر اعظم کا ویرات کوہلی سے موازنہ قبل از وقت ثابت ہو گا ہاں البتہ اگر یہی بات مزید 5 سال کے بعد کی جائے تو پھر کچھ سمجھ آتی ہے -اگر ہم بابر اعظم کی بات کریں تو انہوں نے اپنے 5 سالہ کرکٹ کیریئر میں ابتک 16 سنچریاں سکور کی ہیں اور اس کے علاوہ ان کی ٹیسٹ میچز اور ون ڈے میچز میں بھی رن ریٹ زبردست ہے

یونس خان نے کہا کہ اگر ہم بابر اعظم کے ان پانچ سالوں کا موازانہ کریں تو ہم یہ کہ سکتے ہیں کہ بابر اعظم  کے اندر وہ تمام خوبیاں مجود ہیں جو کہ اس کو ویرات کوہلی جیسا یا اس سے بھی بہتر پلیر بنا سکتیں ہیں -اہوں نے کہا وہ لوگ جو ان دونوں کا موازنہ کرتے ہیں وہ یہ موازنہ  قبل از وقت کر رہے  ہیں اور انکو ایسا نہیں کرنا چاہے -اگر ان لوگوں نے ایسا کرنا ہے تو پھر ان کو 5 سال انتظار کرنا پڑیگا

 

You May Also Like

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *