fbpx
News

میں نہیں سمجھتا کہ نسیم شاہ پاکستان کو کوئی ٹیسٹ میچ جتوا سکتا ہے

میں نہیں سمجھتا کہ نسیم شاہ پاکستان کو کوئی ٹیسٹ میچ جتوا سکتا ہے – جی ہاں یہ الفاظ ہیں پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق سینئر کھلاڑی سہیل تنویر جوکہ خود بھی پاکستان کرکٹ ٹیم کا کبھی بھی مستقل طور پر حصہ نہیں رہے ہیں – ہو سکتا ہے کہ ان کی بات میں وزن ہو اور ابھی نسیم شاہ چھوٹے ہیں اور سیکھنے کا مراحل سے گزر رہے ہیں – مگر سہیل تنویر ان حالات میں ایسا کو بھی بیان نہیں دینا چاہیے تھا جبکہ پاکستان اور انگلینڈ کی ٹیموں کے درمیان ٹیسٹ متچز ہو رہے ہیں اور مخالف ٹیم بھی نسیم شاہ کو اپنے خلاف ایک بہترین بولر سمجھتی ہے

بعض ماہرین کا کہنا ہے کہ  اس طرح کے بیانات دینے سے کھلاڑی کا اعتماد ختم ہونے کا یا پھر کم ہونے کا خطرہ ہوتا ہے – کیونکہ اس طرح کے بیانات دینے والے کا تو کچھ نہیں بگڑتا ہے مگر وہ اچھے خاصے کھلاڑی کو دنوں پر ڈال دیتے ہیں ہیں اور پھر اگر کھلاڑی بھی بلکل بچہ ہو اور نیا نیا ٹیم کا حصہ بنا ہو تو پھر ایسے بیانات کے زیادہ مضر اثرات ہو سکتے ہیں

مگر سننے میں آ رہا ہے کہ سہیل تنویر اپنے اس بیان کے ساتھ یہ بھی کہا ہے کہ اس کے لیے ہماری کرکٹ ٹیم کی مینجمنٹ کو تھوڑا صبر سے کام لینا پڑے گا – اور سابق بولر نے ساتھ ساتھ یہ بھی کہا ہے کہ وہ ابھی سیکھانے کے عمل سے گزر رہا ہے اور وہ یقینا ایک بہت اچھا سپیڈ سٹار بن کر ابھرے گا – مگر اس کے ساتھ ساتھ سہیل تنویر نے یہ بھی کہا کہ ابھی بھی نسیم شاہ کو اپنی بولنگ مین بہتری کرنے کی ضرورت ہے

سہیل تنویر نے اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی کہا کہ وہ نہیں سمجھتے ہیں کہ نسیم شاہ کوئی ہلکے لیول کا کھلاڑی ہے – سہیل تنویر نے کہا کہ وہ اس کو بہت اچھے لیول کا کھلاڑی سمجھتے ہیں اور ان کا خیال ہے کہ وہ آنے والے وقت پاکستان کرکٹ ٹیم میں ایک چمکتا ہوا ستارہ ثابت ہونگے مگر اس وقت ان کو بہت زیادہ محنت کی ضرورت ہے اور اگر وہ دل لگا کر محنت کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو پھر کوئی بھی ان کو ہوا میں اڑنے سے نہیں روک سکے گا

سہیل تنویر نے مزید کہا کہ وہ ابھی اتنی چھوٹی سے عمر میں ہی یہ بات بڑے اچھے طریقے سے جانتے ہیں کہ گیند کو سوئنگ کس طرح کرنا ہے اور یہی نہیں بلکہ وہ گیند کو دونوں طرف سے سوئنگ کرنا جانتے ہیں لہذا اس کا مطلب ہے کہ وہ قدرتی طور پر اس گیم میں بہت زیادہ صلاحیت رکھتے ہیں اور پھر جب ایسے کھلاڑیوں کو کوئی اچھا پلیٹ فارم مل جاتا ہے تو پھر یہ بہت بڑے کھلاڑی بن کر ابھرتے ہیں اور آسمانوں کو چھوتے ہیں

مگر اس کے ساتھ ساتھ انھوں نے کہا کہ وہ نسیم شاہ ابھی میچور نہیں ہے لہذا اس سے کسی ایسی قسم کی امید لگانا درست نہیں ہو گا کہ وہ اکیلا آپ کو کوئی ٹیسٹ میچ جتوا کر دیدے اس بلکل ہی ناممکن ہے – اس کے ساتھ انہوں نے یہ بھی کہا کہ جب کوئی بھی نیا کھلاڑی انٹرنیشنل کرکٹ میں داخل ہوتا ہے تو وہ تھوڑا پریشان ضرور ہوتا ہے کیونکہ انٹرنیشنل کرکٹ بلکل مختلف ہوتی ہے

مگر نسیم شاہ میں ایسی تمام خوبیاں ہیں جس کی وجہ سے وہ انٹرنیشنل کرکٹ میں بہت عرصے تک پاکستان کی خدمات کر سکتے ہیں – اس بات میں یقینا وزن ہیں کیونکہ ہم نے کئی ایسے کھلاڑی بھی دیکھے ہیں جوکہ اپنے پہلے ہی انٹرنیشنل متچز مین بہت اچھی پرفارمنس ڈے چکے ہیں مگر وہ اس کے بعد کبھی نظر نہیں آئے ہیں

مزید پڑھیں: وہ لمحہ جب ڈریوڈ نے شعیب کو آفریدی کی سائیڈ لینے پر ذلیل کر دیا

مثال کے طور پر پاکستان کرکٹ ٹیم کے اندر ایک کھلاڑی تھے سلیم الہی جنہوں نے اپنی پہلی ہی انننگز میں سنچری سکور کی تھی مگر وہ انٹرنیشنل کرکٹ میں اپنا نام نہیں بنا سکیں تھے اور تھوڑے ہی عرصے کے بعد وہ کرکٹ ٹیم سے نکل گئے تھے اور اسی طرح اگر ہم آسٹریلیا کی ٹیم کی بات کریں تو ان کے پاس ایک بولر تھے جن کا نام تھا اینڈی بکل انھوں نے نے بھی اپنے پہلے ہی ون ڈے میچ میں صرف 0 2 رنز دیکر 7 کھلاڑیوں کو آوٹ کیا تھا مگر یہ کھلاڑی بھی آسٹریلیا کی ٹیم میں زیادہ دیر تک نظر نہیں آئے

Leave a Comment